مصنف کی تحاریر : قیوم راجہ

برطانیہ میں ‘ریسٹوریٹیو جسٹس” مہم میں کشمیری کمیونٹی کہاں کھڑی ہے؟

تحریر : قیوم راجہ برطانیہ میں اس وقت درجنوں مختلف رنگ و نسل کے لوگ آباد ہیں جس کی وجہ سے اب برطانیہ کو کثیر الثقافتی معاشرہ کہا جاتاہے۔ بڑی کمیونیٹیز میں یہودی، افریقی، بھارتی، پاکستانی، بنگلہ دیشی اور کشمیری ہیں جبکہ ہانگ کانگ اور چین کی بھی کافی تعداد ...

مزید پڑھیں »

آزاد کشمیر کے ایک پسماندہ علاقہ میں الحبیب ہسپتال کی تعمیر : قیوم راجہ

آزاد کشمیر کے ایک پسماندہ علاقہ میں الحبیب ہسپتال کی تعمیر : قیوم راجہ

تحریر : قیوم راجہ ہر کہانی کے پیچھے ایک کہانی ہوتی ہے۔ الحبیب ہسپتال کی تعمیر کے پیچھے بھی ایک کہانی ہے۔ یہ وطن اور انسانیت سے محبت اور درد کی کہانی ہے۔ 1961 میں تتہ پانی اور ہجیرہ کے درمیان دھر بازار سے چار ہزار فٹ کی بلندی پر ...

مزید پڑھیں »

لمحہ موجود کے اسیر سیاستدان، ادارے اور عوام

تحریر: قیوم راجہ ہمارے معاشرے میں ہر دوسرا خاص و عام انسان بد عنوانی، بد دیانتی اور بد اخلاقی کا رونا رو رہا ہے لیکن اس سوال پر بہت کم غور کیا جاتا ہے کہ آخر اس کا زمہ دار کون ہے اور حل کیا ہے؟ کیا جو کچھ ہم ...

مزید پڑھیں »

آزاد کشمیر کے پسماندہ گائوں کی یونیورسٹی طالبہ کا گولڈ میڈل : قیوم راجہ

تحریر قیوم راجہ چند دن قبل میں میرپور میں پبلک ڈپلومیسی کے دفتر کے سلسلے میں مصروف تھا کہ اپنے آبائی گائوں کھجورلہ کے ایک ادمی نے فون پر بتایا کہ کوٹلی یونیورسٹی میں زیر تعلیم آصف چکی والے کی بیٹی نے گولڈ میڈل حاصل کر لیا۔ آصف بٹ چکی ...

مزید پڑھیں »

مجبوریاں اور زمہ داریاں : قیوم راجہ

اچھے انتظامی افسر کے فرائض مسائل اور حل : قیوم راجہ

تحریر: قیوم راجہ ہماری تحریک آزادی کی تاریخ جہاں شہیدوں اور غازیوں سے بھری پڑی ہے وہاں ایسے قدردانوں اور مہربانوں کی بھی کمی نہیں جنہوں نے ہر دور میں تحریکی لوگوں کی اخلاقی مدد کی۔ میں نے اپنی طویل تحریکی زندگی میں دیکھا کہ قومی کاز کی اخلاقی و ...

مزید پڑھیں »

سوچوں کا جنم؟ قیوم راجہ

تحریر : قیوم راجہ چند دن قبل میں کوٹلی ایک لیڈی ڈاکٹر کے پاس بیٹھا ہوا تھا جو ایک رول ماڈل ہیں اور خواتین ان سے انسپریشن حاصل کرتی ہیں۔ میں نے انکی زبان سے کبھی کوئی منفی اور حوصلہ شکن بات نہیں سنی تھی لیکن جب میں نے کہا ...

مزید پڑھیں »

تعلیم کی طاقت : قیوم راجہ

تعلیم کی طاقت : قیوم راجہ

دنیا بھر میں تندرستی کو ہزار نعمت اور علم کو سب سے بڑی طاقت تصور کیا جاتا ہے۔ وقت کے ساتھ ساتھ انسان بوڑھا ہو کر کمزور ہو جاتا ہے لیکن علم دوست انسان علم کی طاقت کے بل بوتے پر بہتر اور مضبوط ہوتا رہتا ہے۔ اس کی ایک ...

مزید پڑھیں »

صاحب منصب کے نام : قیوم راجہ

حضرت بہلول اور حضرت جنید بغدادی کے درمیان طعام، کلام اور آرام پر مکالمہ ہو رہا تھا۔ حضرت بہلول حضرت جنید کی طرف سے طعام ، کلام اور آرام بارے کیے گے اپنے ہر سوال کے جواب سے اختلاف کرتے ہوئے حضرت جنید سے فرمایا کہ آپ خود کو اتنی ...

مزید پڑھیں »

ایک باپ کا امتحان! قیوم راجہ

نوجوان سرکاری معلمہ صائمہ بیگم کا تعلق ہمارے علاقے اور قبیلے سے نہ تھا لیکن اپنے اخلاق اور فہم و فراست کی وجہ سے وہ بہت جلد اپنے نئے گھر اور خاندان میں اپنا مقام بنانے میں کامیاب ہو گئی تھیں ۔ وہ میرے برادر نسبتی سابق وائس چیئرمین صاحبزادہ ...

مزید پڑھیں »

جب انسان بدلتے ہیں ؟ قیوم راجہ

جب انسان بدلتے ہیں ؟ قیوم راجہ

تحریر: قیوم راجہ یہ تحریر میں ان طلباء و طالبات اور تحریکی مرد و خواتین کے لیے لکھ رہا ہوں جو اپنے معاشرے کے سیاسی ، اقتصادی اور تعلیمی نظام سے تنگ ہیں۔ وہ تحریک آزادی میں کردار ادا کرنے کے ساتھ ساتھ معاشرتی اصلاح بھی چاہتے ہیں لیکن وہ ...

مزید پڑھیں »