امن کے بغیر برصغیر آزادی سے لطف اندوز نہیں ہو سکتا، قیوم راجہ

میرپور: حریت پسند رہنماء اور جموں کشمیر پبلک ڈپلومیسی کے چیئرمین قیوم راجہ نے پاک- ھند وزراء اعظم کے نام ایک مشترکہ مکتوب میں کہا ہے کہ برطانیہ سے آپ کی آزادی کا مقصد اسوقت پورا ہو گا جب آپ برصغیر میں امن قائم کر کے ترقی و خوشحالی کی راہ ہموار کریں گے اور امن اسوقت تک نہیں ہو گا جب تک مسلہ کشمیر جموں کشمیر کی عوام کی امنگوں کے مطابق حل نہیں ہو جاتا۔ قیوم راجہ نے خط میں کہا ہے کہ بھارت اپنے طور پر 5 اگست 2019 کے یکطرفہ فیصلے کے مطابق مسلہ کشمیر کے حل کا دعویٰ تو کر سکتا ہے اور پاکستان نے بھی گلگت بلتستان کے سٹیٹس کو تبدیل کرنے کی کوشش کی ہے اور آزاد کشمیر کا بھی گلا دبا رکھا ہے لیکن ریاست جموں کشمیر کا دیر پا حل وہی ہو گا جو پوری ریاست کی عوام ایک ہی وقت میں خود کرے گی ورنہ یہ آگ سلگتی رہے گی جس سے پاک-ھند عوام بھی متاثر رہے گی۔ قیوم راجہ نے کہا کہ پاک-ھند کے عوام نے ضرور سوچا ہو گا کہ برطانوی راج کے خاتمے کے بعد برصغیر آزادی سے لطف اندوز ہو گا مگر خطے کی سیاسی قیادت کی ھٹ دھرمی سے ایسا نہیں ہو سکا۔ انہوں نے کہا برصغیر کی عوام بھی دوسری قوموں کی طرح امن و خوشحالی کی مستحق ہے جس کو ممکن بنانا آپ کا فرض ہے۔ قیوم راجہ نے کہا ہے کہ پڑوسیوں کے امن کا مطلب گھر کا امن ہے۔ ماضی میں سب سے زیادہ یورپی ممالک نے آپسی جنگوں میں قتل عام کیا مگر آخر انہیں احساس ہوا کہ روشن مستقبل کے لیے انہیں ٹکرائو نہیں تعاون کی ضرورت ہے جس سے ہمیں بھی سیکھنے کی ضرورت ہے۔

تعارف: رانا علی زوہیب

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*