بے مثال پنجابی صوفی شاعر اور اسکالر "قسور مبارک بٹ” دنیا فانی سے رخصت ہو گئے

لاہور : پنجابی زبان کے مایہ ناز شاعر قسور مبارک بٹ”ہزاروں چاہنے والوں کو سوگوار چھوڑ کر خالق حقیقی سے جا ملے، قسور مبارک بٹ پنجابی زبان کی جدید کلاسک روایت کے شاعر تھے، ان کا کلام اپنے ہم عصر شاعروں کے حوالے سے بے مثال رہا۔

انہوں نے ریاستی ملکیت کے ادبی بونوں کے اعصاب پر اپنی شاعری کے ذریعے اپنی دھاک پیدا کی، ان کی ادبی خدمات اس قدر تھیں، ناقد ان کے ہنر اور خیالات کے مظہر تک نہیں پہنچ سکتے ہیں۔ بطورجدید صوفی شاعر سندھ/ ہڑپہ تہذیب کے امتزاج کے ساتھ گنجی بار کے ایک شاعر نے اپنی مادری زبان کے جدید ادب کو تقویت دینے کے لیے اپنی شاعری کے ذریعے بنیادی کردار ادا کیا۔

آمریت کے دور میں بھی وہ ایک سیاسی کارکن اور مزاحمت کی آواز رہے، ان کے ہنر اور زندگی کے بہت سے پہلو ہیں جو سچے نقادوں اور محققین کے ذریعے آشکار ہوں گے اور پنجابی کی ادبی بالادستی کے نئے افق کھلیں گے۔

0Shares

تعارف: رانا علی زوہیب

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

0Shares